فنانشل ایکشن ٹاسک فورس: پاکستان کے لیے بلیک لسٹ کا خطرہ ٹل گیا

فنانشل ایکشن ٹاسک فورس (ایف اے ٹی ایف) نے پاکستان کو ادارے کی گرے لسٹ میں برقرار رکھنے کا فیصلہ کیا ہے۔

پاکستان کی وزارت خزانہ نے جمعے کو جاری کیے گئے ایک بیان میں کہا ہے کہ ایف اے ٹی ایف کا ابتدائی اجلاس 16 سے 21 فروری تک پیرس میں منعقد ہوا۔

اجلاس میں پاکستان کی نمائندگی وفاقی وزیر اقتصادی امور حماد اظہر نے کی۔

وزارت خزانہ کے بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ مقررہ وقت میں پاکستان کی جانب سے ایف اے ٹی ایف کے ایکشن پلان پر عمل درآمد کے لیے کیے گئے اقدامات کو تسلی بخش قرار دیا ہے جس کا اظہار اضافی نو نکات پر مکمل عمل کرنے سے ہوتا ہے۔

ایف اے ٹی ایف نے جون 2020 تک ایکشن پلان مکمل کرنے کے لیے پاکستان کو مزید اقدامات کرنے کو کہا ہے۔‘

دوسری طرف چین کی وزارت خارجہ کا کہنا ہے کہ پیرس میں ہونے والے فنانشل ایکشن ٹاسک فورس (ایف اے ٹی ایف) کے حالیہ اجلاس میں ارکان کی اکثریت نے دہشت گردوں کی مالی معاونت روکنے کے لیے پاکستان کی کوششوں کو سراہا ہے۔

ترجمان چینی وزارت خارجہ گینگ شوانگ نے جمعے کو نیوز بریفنگ میں بتایا کہ ’اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ پاکستان کو اپنے ایکشن پلان پر عمل درآمد کے لیے مزید وقت دیا جائے گا۔‘

واضح رہے کہ چینی وزارت خارجہ کے ترجمان سے انڈین میڈیا کی ان رپورٹس کے حوالے سے سوال کیا گیا تھا کہ چین نے ایف اے ٹی ایف میں پاکستان کی مزید حمایت نہ کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

چینی وزارت خارجہ کے مطابق ایف اے ٹی ایف پر موقف تبدیل نہیں کیا (فوٹو: سوشل میڈیا)

اس پر ترجمان چینی وزارت خارجہ کا کہنا تھا کہ ’چین کا اس معاملے پر موقف تبدیل نہیں ہوا ہے۔‘

’چین سمجھتا ہے کہ ایف اے ٹی ایف کا مقصد منی لانڈرنگ اور دہشت گردی کی مالی معاونت روکنے کے لیے اقدامات کی حمایت اور عالمی مالیاتی نظام کو محفوظ بنانا ہے۔ ہم پاکستان کو مزید معاونت فراہم کرنے کے لیے متعلقہ فریقین کے ساتھ مل کر کام کرنے کے لیے تیار ہیں۔‘

چین کی وزارت خارجہ نے اپنی ٹویٹ میں بھی اسی قسم کے خیالات کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ ’پاکستان نے دہشت گردی کی مالی معاونت روکنے کے لیے کافی اقدامات کیے ہیں اور پیرس میں ایف اے ٹی ایف کے ارکان کی اکثریت نے بھی اس کوششوں کو تسلیم کیا ہے۔چین اور دیگر ممالک بھی اس سلسلے میں پاکستان کو معاونت فراہم کرنے کی پیش کش کرتے رہیں گے۔‘

دوسری جانب پاکستان کی وزارت خزانہ کے ایک بیان کے مطابق وزیراعظم عمران خان کے مشیر خزانہ حفیظ شیخ نے چینی سفیر یاؤ جنگ سے ملاقات میں چین کی جانب سے ایف اے ٹی ایف میں بھرپور حمایت کرنے پر شکریہ ادا کیا۔

ایف اے ٹی ایف کے اجلاس میں احماد اظہر نے پاکستان کی نمائندگی کی (فوٹو: اے پی پی)

بیان کے مطابق مشیر خزانہ نے کہا کہ ’چین اور دیگر دوست ممالک نے ایف اے ٹی ایف میں پاکستان کو اپنا فریم ورک بہتر بنانے کے لیے حمایت کی۔‘

یاد رہے کہ فرانس کے دارالحکومت پیرس میں پیر کے روز شروع ہونے والے ایف اے ٹی ایف کے ابتدائی اور ورکنگ گروپ کے اجلاس آج جمعے کو اختتام پذیر ہو گئے ہیں۔

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
ہمارے ساتھ رابطہ کریں
Close
Close