لاہور : بوگس ڈپلومہ پر میڈیکل سپرنٹنڈنٹ جنرل ہسپتال کا ایکشن ، 2ملازمین بر طرف

اس خبر میں
  • مدثر حبیب کو جعلی ڈپلومہ اور افراز افراہیم کو مسلسل غیر حاضری پر نوکری سے نکال دیا گیا
  • جعلسازی اور دھوکہ دہی سے ملازمت حاصل کرنیوالے کسی رعائیت کے مستحق نہیں:ڈاکٹر عبدالرزاق

لاہور (آج تک) میڈیکل سپرنٹنڈنٹ لاہور جنرل ہسپتال ڈاکٹر عبدالرزاق نے جعلی ڈپلومہ پر بھرتی اور مسلسل غیر حاضری پر 2ملازمین کو نوکری سے برطرف کرنے کے احکامات جاری کر دیے ہیں جس کا با قاعدہ نوٹیفکیشن بھی جاری کر دیا گیا ہے

جبکہ گیسٹرو سکوپی اسسٹنٹ کی آسامی پر بھرتی کے وقت جعلی ڈپلومہ دینے والے مدثر حبیب کے خلاف مقدمہ کے اندراج کے لئے محکمہ اینٹی کرپشن کو مراسلہ بھی بھجوا دیا گیا ہے ۔

اس حوالے سے گفتگو کرتے ہوئے ایم ایس ڈاکٹر عبدالرزاق کا کہنا تھا کہ جعلی کاغذات کا سہارا لے کر ملازمت کے دوران تنخواہیں وصول کرنے والے ملازم نے قومی خزانے کو جو نقصان پہنچایا ہے اُس سے ایک ایک پائی واپس لے کر سرکاری خزانے میں جمع کروائیں گے اور انہیں کیفر کردار تک پہنچائیں گے تاکہ آئندہ کوئی ایسی کاروائی کا متحمل نہ ہو ۔

مدثر حبیب 12اگست2009کو گیسٹرو سکوپی اسسٹنٹ بھرتی ہوا تھا جس ڈپلومہ کی بنیاد پر اُس نے ملازمت حاصل کی تھی حکومتی پالیسی کے مطابق پنجاب میڈیکل فیکلٹی سے تصدیق کروانے پرمدثر حبیب کا ڈپلومہ جعلی نکلا جس پر فوری طور پر اُس کو ملازمت سے بر طرف کر دیا گیا ۔

علاوہ ازیں محمد افراز افراہیم ریڈیو گرافر جو یکم مئی 2020سے مسلسل غیر حاضر تھا جس کو ضابطے کی مکمل کاروائی کرنے کے بعد اسے بھی ملازمت سے فارغ کر دیا گیا ہے ۔

میڈیکل سپرنٹنڈنٹ ڈاکٹر عبدالرزاق نے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ دھوکہ دہی اور جعلسازی سے بھرتی ہونے والے عناصر کسی بھی رعائیت کے مستحق نہیں ہو سکتے اور اُن کے خلاف فوری محکمانہ کاروائی عمل میں لائیں گے ۔

ایم ایس جنرل ہسپتال نے کہاکہ ملازمین کی تعلیمی اسناد /سرٹیفکیٹ /ڈپلومہ کی ترجیحی بنیادوں پر تصدیق کروا رہے ہیں اور جہاں کہیں بھی دھوکہ دہی اور بوگس کاغذات پائے گئے وہاں مروجہ اصولوں کے مطابق سخت تادیبی کاروائی عمل میں لائی جائے گی اور فوری ایکشن ہوگا ۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
ہمارے ساتھ رابطہ کریں