گھوٹکی: ڈپٹی کمشنر کا ایس ایم سی فنڈز کے عدم استعمال پر تشویش کا اظہار

گھوٹکی(آج تک) ڈپٹی کمشنر گھوٹکی محمد عثمان عبدﷲ کی زیر صدارت ان کے دفتر میں اسکول مئنیجمنٹ کمیٹی فنڈز کے استعمال کے سلسلے میں ایک اجلاس منعقد ہوا جس میں ڈسٹرکٹ ایجوکیشن آفیسر اور چیف مانیٹرنگ آفیسر میڈم زینب سمیت تعلقہ ایجوکیشن افسران و مانیٹرنگ اسسٹنٹز نے شرکت کی.

اس موقع پر ڈپٹی کمشنر نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ایس ایم سی فنڈز درست طریقے سے استعمال نہیں ہوتے جس وجہ سے اسکولوں کی حالت خراب ہوجاتی ہے،

رکارڈ میں ایک کرسی کی دس دس مرتبہ مرمت دکھائی جاتی ہے اس کے باوجود اسکولوں میں موجود کرسیاں خستہ حالی کا شکار ہوتی ہیں،

انہوں نے کہا کہ حکومت سندھ نے ضلع گھوٹکی کے اسکولوں کی حالت بہتر بنانے کے لئے نیا ایس ایم سی فنڈ جاری کیا ہے جس کا درست استعمال کرکے اسکولوں کی حالت بہتر بنائی جائے گی.

اس موقع پر انہوں نے چیف مانیٹرنگ آفیسر کو ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ پہلے مرحلے میں جن اسکولوں کے پاس 50 سے ایک لاکھ روپے فنڈ موجود ہے ان کی ضروریات جانچنے کے لئے ایک پروفارما بنایا جائے جو کہ متعلقہ ہیڈ ماستر پر کرکے دیں گے تا کہ ایس ایم سی فنڈز کا درست استعال کیا جاکسے.

انہوں نے ڈی ای او کو بھی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ وہ ایم سی فنڈز کے درست استعمال کو یقینی بنانے کے لئے موثر اقدامات کریں جبکہ اساتذہ کے تبادلے سے قبل سی ایم او کو اعتماد میں لیا جائے تاکہ بعد میں بائیومیٹرک کے مسائل جنم نہ لیں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
ہمارے ساتھ رابطہ کریں