سعودی عرب کو نشانہ بنانے واے حوثیوں کے ڈرون مار گرائے عرب اتحاد

ریاض (آج تک ) سعودی عرب کو نشانہ بنانے واے حوثیوں کے ڈرون مار گرائے عرب اتحاد 

عرب اتحادیوں نے دعویٰ کیا ہے کہ یمن کےحوثی باغیوں کی جانب سے سعودی عرب پر داغے گئے

4 ڈرون کو ناکام بناتے ہوئے تباہ کردیا گیا۔عرب نیوز کی رپورٹ کے مطابق عرب اتحاد کے ترجمان

کرنل ترکی المالکی کا کہنا تھا کہ ڈرون کو یمن کی حدود میں بھی تباہ کردیا گیا۔

ان کا کہنا تھا کہ اتحادیوں کے پاس صلاحیت ہے اور اس طرح کے خطرات سے نمٹنے کے قابل

ہیں۔کرنل ترکی المالکی نے کہا کہ عرب اتحادی حوثی کے زیر اثر علاقوں سے داغے جانے والے

ڈروں کو فوری طور پر ناکام بناسکتے ہیں۔انہوں نے کہا کہ اتحادیوں نے شہریوں اور شہریوں کے

املاک کے تحفظ کے لیے بین الاقوامیقانون کے مطابق تمام ضروری اقدامات کررکھے ہیں۔

خیال رہے کہ عرب اتحادیوں نے دو روز قبل ہی سعودی عرب کو مسلسل ڈرون اور بلیسٹک میزائلوں

سے نشانہ بنانے پر حوثی باغیوں کے اہداف کو نشانے کے لیے فوجی کارروائی شروع کردی تھی۔

یاد رہے کہ گزشتہ برس 14 ستمبر کو سعودی عرب میں حکومت کے زیر انتظام چلنے والی دنیا

کی سب سے بڑی تیل کمپنی آرامکو کے 2 پلانٹس پر حوثی باغیوں کی جانب سے ڈرون حملے

کیے گئے تھے۔سعودی حکام کے مطابق ڈرون حملوں سے تیل کی تنصیبات میں آگ بھڑک

اٹھی تھی جس پر قابو پالیا گیا تھا۔اس حملے کی ذمہ داری حوثی باغیوں نے قبول کی تھی

جبکہ اس کے عسکری ترجمان نے کہا تھا کہ سعودی حکومت کو مستقبل میں بھی ایسے

مزید حملوں کی توقع رکھنی چاہیے۔سعودی عرب کی زیر قیادت فوجی اتحاد مارچ 2015 سے

یمن میں حکومت مخالف حوثی باغیوں سے جنگ لڑ رہا ہے جبکہ حوثی باغیوں کی جانب سے

سعودی عرب پر ڈرون حملے مسلسل کیے جارہے ہیں۔آرامکو پر حملے کے بعد امریکا کے

سیکریٹری آف اسٹیٹ مائیک پومپیو نے الزام لگایا تھا کہ ایران سعودی عرب میں تقریباً 100

حملوں میں ملوث ہے۔ان کا کہنا تھا کہ کہ کشیدگی ختم کرنے کی تمام تر کوششوں کے

باوجود ایران نے ’دنیا کی توانائی سپلائی‘ پر حملہ کیا۔مائیک پومپیو نے کہا تھا کہ ہم عالمی

برادری سے مطالبہ کرتے ہیں کہ وہ ایران کی جانب سے کیے گئے حملے کی مذمت کریں۔

ان کا کہنا تھا کہ ‘امریکا اپنے اتحادیوں اور شراکت داروں کے ساتھ مل کر اس بات کو یقینی

بنائے گا کہ تیل کی عالمی منڈی مستحکم رہے جبکہ ایران کو اس کی جارحیت پر انصاف

کے کٹہرے میں لایا جائے۔ایران نے سعودی عرب میں ہونے والے ڈرون حملے میں ملوث قرار

دینے کے امریکی الزام کو مسترد کردیا تھا اور وزیرخارجہ جواد ظریف نے اپنے بیان میں کہا تھا

کہ ‘پومپیو زیادہ سے زیادہ دباؤ‘ میں ناکامی کے بعد اب ’زیادہ سے زیادہ دھوکا‘ دینے کی جانب

چلے ہیں۔

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
ہمارے ساتھ رابطہ کریں
Close
Close