پوری دنیا نسلی فلاکت کے دہانے پر آن کھڑی ہے، سیکرٹری جنرل اقوام متحدہ

نیویارک (آج تک) پوری دنیا نسلی فلاکت کے دہانے پر آن کھڑی ہے، سیکرٹری جنرل اقوام متحدہ۔

اقوام متحدہ کے سیکرٹری جنرل انتونیو گوٹریش نے خبردار کیا ہے کہ کورونا وبا کے باعث پوری دنیا کو نسلی فلاکت کا سامنا ہے۔

گوٹرش نے ٹویٹر پر اپنے ویڈیو پیغام میں کہا ہے کہ کووڈ۔19 وبا نے  درس و تدریس کی تاریخ میں سب سے طویل مدت کا وقفہ آیا ہے کہ اس دور میں 160 سے زائد ممالک  کے ایک ارب سے زائد بچے اسکول جانے سے قاصر ہیں۔

دنیا بھر میں کم از کم 4 کروڑ بچوں کے کے جی کی تعلیم سے محروم ہونے کا اشارہ دینے والے سیکرٹری جنرل  کا کہنا ہے کہ ’’کرہ ارض لا تعداد انسانی استعداد  سے محروم بن سکتی ہے، بیسیوں سالہ سلسلے پر کاری ضرب لگ سکتی ہے جس سے نسلی فلاکت کا خطرہ جنم لے سکتا ہے۔‘‘

ان کا کہنا ہےکہ عام وبا سے قبل 25 کروڑ بچے اسکول جانے سے محروم رہے تھے اور ہماری دنیا کو اسوقت’’تعلیمی بحران‘‘ کا سامنا ہے۔ ہم عالمی بچوں اور نوجوانوں کے مستقبل کا تعین کرنے کے نکتے پر ہیں، عصرِ حاضر میں حکومتوں اور ہمارے شراکت داروں کے فیصلے  کروڑوں نوجوانوں کی زندگیوں پر طویل المدت  اثرات مرتب کریں گے۔‘‘

سیکرٹری جنرل نے مزید بتایا کہ وائرس کے پھیلاؤ کو مقامی سطح پر قابو میں لے سکنے والے علاقوں میں اسکولوں کو کھولا جانا چاہیے اور طلبا کو با حفاظت طریقے سے تعلیم حاصل کرنے کا موقع فراہم کیا جانا چاہیے۔

متعلقہ خبریں

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے

Back to top button
ہمارے ساتھ رابطہ کریں
Close
Close